in

جسٹس وقار سیٹھ کے سنائے ہوئے فیصلوں کی تفصیلات سامنے آ گئیں

لاہور(نیوز ڈیسک) سینئر تجزیہ کار لیفٹیننٹ جنرل (ر) امجد شعیب نے کہا ہے کہ حکومت جسٹس وقار سیٹھ کے تمام فیصلوں کی ریسرچ کررہی ہے،اس جج کے لگاتار کافی کیسز ہیں،جن میں اس طرح کے فیصلے دیے گئے،سزائے موت کے 72 دہشتگرد وں کومعاف کردی

،پی ٹی ایم کے تمام لوگوں کو ضمانت پر رہا کردیا۔ انہوں نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں تبصرہ کرتےہوئے کہا کہ میری تحریریں اور تاثرات موجود ہیں، میں نے ہرجگہ کہا کہ جنرل مشرف نے بہت غلطیاں کی ہیں، ان کے بہت سارے ٹرائل ہونے چاہئیں۔کیونکہ ملک کا قانون کوئی بھی توڑے سب کا احتساب ہونا چاہیے۔دوسری بات جج کے پیرا سے متعلق ہے ، یہاں بچے بچے کو پتا ہے کہ کسی کو سرعام لٹکایا نہیں جاسکتا۔ عوام کا پرزور مطالبہ رہا کہ جس نے درجنوں بچوں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا اس کو سرعام پھانسی پر لٹکایا جائے۔لیکن ہمیشہ عدالتوں نے بتایا کہ یہ ممکن نہیں ہے کیونکہ یہ قانون میں نہیں ہے۔سارے لوگوں کو پتا ہے کہ ایسا ممکن نہیں ہے۔جبکہ ایک جج کو علم نہیں ہے کہ سرعام پھانسی دی جاسکتی ہے یا نہیں۔ حکومت ان کے تمام کیسز کا ریسرچ کررہی ہو گی، کیونکہ ان کے لگاتا ر کافی کیسز ہیں،جن میں اس طرح کے فیصلے دیے گئے۔

اس جج نے 72 دہشتگرد جن کو سزائے موت ہوئی تھی ان کو معاف کردیا۔پی ٹی ایم کے ان تمام لوگوں کو ضمانت پر رہا کردیا جن پر بیرونی فنڈنگ کے الزام میں مقدمات تھے۔سینئر تجزیہ کار افتخار احمدن نے کہا کہ میں عمران خان سے متاثر ہوں، ان کا فین ہوگیا ہوں۔ عمران خان جب جوان تھے، ان کے بال بھی تھے، پپو لگتے تھے، تب سے لے کربڑھاپے تک وہ ایک ہی مطالبہ کرتے تھے کہ آمر کو سزا دو، آئین کی تباہی کرنے والے کو سزا دو۔آرٹیکل 6کا نفاذ کرو ، جو ایسا نہیں کرتا وہ اس کا ساتھی ہے۔ اب ان کا مطالبہ پورا ہوگیاہے۔ لیکن اس جج کے پیچھے کیوں پڑے ہو؟ اس فیصلے میں ایک پیرا نہیں ہے۔ سب لوگ اس فیصلے کے ایک پیرے کے پیچھے پڑے ہوئے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

جنرل قمر جاوید باجوہ کو مدت ملازت میں توسیع لینی چاہیئے یا نہیں ؟

شریفوں اور زر والوں کی شامت