دورہ سری لنکا پاکستان میں کرکٹ کی واپسی کی ایک اُمید

0
6

میں سری لنکن کرکٹ ٹیم پر حملے کے بعد سے پاکستان پر انٹرنیشنل کرکٹ کے دروازے ہمیشہ کے لیے بند ہوتے معلوم ہو رہے تھے لیکن زمبابوے اور ورلڈ الیون کے دورہ پاکستان کے بعد سری لنکا کے حالیہ دورے نے اُمید کی ایک کرن پیدا کی ہے۔ سری لنکا نے اپنے اس دورے میں 3 ایک روزہ اور 3 ٹی ٹوئنٹی میچز کھیلے اور بغیر کسی نا خوشگوار واقعے کے یہ سیریز اپنے اختتام تک پہنچی۔اس موقعہ پر پاکستان کرکٹ بورڈ کی طرف سے سیکیورٹی کے سخت انتظام کیے گئے اور کھلاڑیوں کی خوب مہمان نوازی کی گئی۔دورے کے اختتام پر تمام کھلاڑیوں نے انتظامات پر اطمینان کا اظہار کیا اور اچھی مہمان نوازی پر پی سی بی کا شکریہ ادا کیا۔۔۔

پاکستان میں نامناسب سیکیورٹی صورتحال کی وجہ سے کھلاڑیوں اور شائقین نے اپنے ملک میں کرکٹ کھیلنے اور دیکھنے کے لئے بہت صبر کیا ہے۔پاکستان دنیا کے اُن چند ممالک میں سے جہاں پر کرکٹ کا جنون پایا جاتا ہے اور شائقین اپنے کرکٹ ہیروز کو اپنی آنکھوں کے سامنے اپنے ملک کے گراؤنڈز میں کھیلتا دیکھنا چاہتے ہیں۔سری لنکن ٹیم پر حملے کے بعد سے پاکستان اپنی تمام ہوم سیریز یو اے ای میں کھیلتا آ رہا ہے اور پاکستانی ٹیم کے بیشتر کھلاڑی ایسے ہیں جنہوں نے اپنی سرزمین پر کوئی انٹرنیشنل میچ نہیں کھیلا لیکن دورہ زمبابوے اور سری لنکا کے بعد اُنکی اپنی سرزمین پر کھیلنے کی حسرت پوری ہو گئی۔۔۔

پاکستان کرکٹ بورڈ پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی کے لئے مسلسل کوششیں کر رہا ہے۔پاک سری لنکا سیریز کے موقعہ پر آئرلینڈ اور انگلینڈ کرکٹ بورڈ کے ایگزیگٹو ڈیو ٹروم اور ہیریسن نے پاکستان کا دورہ کیا اور انکو سیکیورٹی سمیت تمام انتظامات سے آگاہ کیا گیا جس پر انہوں نے اطمینان کا اظہار کیا۔ڈیو ٹروم نے اس موقعہ پر آئرلینڈ کرکٹ ٹیم کے دورہ پاکستان کا عندیہ دیا۔اُنکا کہنا تھا کہ آئرلینڈ پاکستان میں کرکٹ کی بحالی کے لئے اپنا کردار ادا کرنا چاہتا ہے۔اگر ایسا ہوتا ہے تو یہ پاکستان میں کرکٹ کی بحالی کے لئے اہم بیشرفت ہو گی۔۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here