زلزلے سے بچنے کے لئے کیا حفاظتی تدابیر اپنانی چاہئیں۔۔

0
80

ہر سال دنیا میں ہزاروں افراد قدرتی آفات کی وجہ سے لقمہ اجل بن جاتے ہیں۔ان قدرتی آفات کو کنٹرول کرنے یا انکی پیشگی اطلاع کا کوئی مناسب نظام ابھی تک دریافت نہیں ہوا ہے جس کی وجہ سے ان آفات کی صورت میں بہت سی زندگیاں خطرے میں پڑ جاتی ہیں۔طوفان،سیلاب کے علاوہ زلزلہ بھی ایک ایسی خطرناک قدرتی آفت ہے جس نے اس دنیا میں بسنے والے لاکھوں انسانوں کو متاثر کیا ہے۔زمین کی اندرونی تہ میں کچھ چٹانیں ہوتی ہیں جن کا بیلنس بگڑنے کی وجہ سے زلزلے آتے ہیں۔زلزلے عموماً پہاڑی علاقوں میں زیادہ آتے ہیں اور اگر زلزلے کے مرکز کی زیرِ زمین گہرائی زیادہ نہ ہو تو اُسکی شدّت زیادہ ہوتی ہے اور زیادہ تباہی ہوتی ہے۔۔۔

جاپان دنیا میں ایک ایسا ملک ہے جہاں پر زلزلے کافی مقدار میں آتے ہیں لیکن زیادہ تباہی اس لیے نہیں ہوتی کیوں کے وہاں کے لوگ احتیاطی تدابیر سے واقف ہیں۔پاکستان میں 2008 کے زلزلے کی وجہ سے لاکھوں لوگ متاثر ہوئے اور ہزاروں اموات ہوئیں۔جس کے بعد آگاہی کا ایک سلسلہ شروع کیا گیا لیکن بعد میں روک دیا گیا۔پچھلے سال دو سال سے پاکستان میں زلزلوں کا سلسلہ دوبارہ سے شروع ہو گیا ہے جس کے بعد لوگوں میں آگاہی پیدا کرنا بہت ضروری ہو گیا ہے۔زلزلے کو روکنا یا اسکی پیشن گوئی کرنا انتہائی مشکل ہے لیکن لوگوں کو حفاظتی تدابیر کی آگاہی دے کر بہت سے نقصانات سے بچا جا سکتا ہے۔۔

زلزلے کی صورت میں سب سے پہلے تو اپنے حواس کو قابو میں رکھنا چاہئے کیوں کہ اگر آپ کی سوچنے سمجھنے کی قوت اس نازک وقت میں جواب دے جائے تو پھر آپ آپشنز ہوتے ہوئے بھی کچھ نہیں کر پاتے تو سب سے پہلے تو اپنے اعصاب کو مضبوط رکھنا چاہئے۔اس کے علاوہ تمام افراد کو فرسٹ ایڈ باکس اپنے گھر میں ضرور رکھنا چاہئے کیوں کہ ناگہانی آفات میں یہ کارآمد ثابت ہوتا ہے۔اگر آپ اپنے کمرے میں ہیں اور زلزلہ آگیا ہے تو فوراً اس کمرے سے نکل کر کسی کھلے میدان میں آجائیں۔اگر ایسا ممکن نہیں ہے تو سینٹر میں کھڑے ہونے کی بجائے کمرے کے کونوں کی طرف لپک جائیں کیوں کہ چھت جب گرتی ہے تو اسکا وزن سینٹر میں زیادہ ہوتا ہے۔الماریوں وغیرہ پر شیشے یا لوہے کی کوئی خطرناک چیز نہ رکھیں جسکا سر میں لگنے کا خطرہ ہو۔کوشش کریں کہ زلزلے کی صورت میں کسی بیڈ یا میز کے نیچے گھس جائیں اس سے کچھ حد تک بچاؤ ممکن ہے۔اگر آپ کچن میں ہیں تو فوراً آگ اور گیس والو بند کر دیں اور زلزلے کے دوران لفٹ میں سفر نہ کریں کیوں کہ لفٹ کے پھنسنے کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے۔کمرے سے باہر نکلتے وقت اپنے ہاتھوں کی دونوں مٹھیاں اپنے سر پر رکھ لیں تا کہ کوئی چیز سر پر نہ لگے۔دورانِ زلزلہ گاڑی میں سفر نہ کریں اور زلزلہ رکنے تک گاڑی میں بیٹھے رہیں۔زلزلے کے جھٹکے عمومًا ایک سے دو منٹ تک رہتے ہیں لہٰذا کوشش کریں کہ کسی بوسیدہ عمارت کے پاس سے نہ گزریں اور کم از کم 20 منٹ کسی بھی عمارت کے اندر داخل ہونے سے پرہیز کریں۔اس کے علاوہ ریسکیو اداروں کے نمبرز حفظ رکھیں اور کال کر کے اپنی اور دوسروں کی جان بچائیں۔۔۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here