وزیر اعظم نے انسانیت کے دِل جیت لیے۔

0
230

وزیر اعظم نے انسانیت کے دِل جیت لیے۔۔!! سرکاری ملازمین کی تنخواہیں کم کرنے کی بجائے وزراء کی 6 مہینے کی تنخواہیں کم کر دیں، پوری دُنیا میں مثال قائم

وزیراعظم جسینڈا آرڈرن کا اہم اقدام سامنے آیا ہے۔ سرکاری ملازمین کی بجائے وزراء کی تنخواہوں میں کمی کردی۔ ۔تفصیلات کے مطابق نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن نے کورونا وائرس کے عالمی وبا کے پھیلاؤ میں مالی طور پر مشکلات کا شکار افراد سے اظہار یکجہتی کے لئے اپنی تنخواہ میں

20 فیصد کمی کا اعلان کیا ہے۔جیسنڈاآرڈن کا کہنا ہے کہ وہ اپنی، اپنے وزراء اور اعلی داروں کی تنخواہیں اگلے چھ ماہ کے لیے 20 فیصد تک کم کر رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ صرف اس فیصلے سے حکومت کی مالی پوزیشن بہتر نہیں ہوگی مگر یہ قیادت کا معاملہ ہے۔یہ فیصلہ نیوزی لینڈ کے ان شہریوں سے اظہارِ یکجہتی کے لیے ہے جو موجودہ حالات میں مالی طور پر متاثر ہوئے ہیں۔وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن نے مزید کہا کہ تنخواہوں میں کمی کا فیصلہ تمام سرکاری ملازمین کے لئے نہیں ہے، نرسنگ ،پولیس اور شعبہ صحت کے کارکنوں سمیت کئی شعبوں کے افراد انتہائی اہم ہیں۔

حکومت ان کی تنخواہوں میں کمی تجویز نہیں کرتی اور نہ ہی نیوزی لینڈ کے شہری اس کو مناسب سمجھیں گے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق نیوزی لینڈ کی وزیراعظم کی تنخواہ دو لاکھ پچاس ہزار امریکی ڈالر ہے۔واضح رہے کہ نیوزی لینڈ میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے ایک ماہ کا لاک ڈاؤن ہے۔ برطانوی ذرائع ابلاغ کے مطابق نیوزی لینڈ کے حکام نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے ایک ماہ کے لیے لاک ڈاؤن کا اعلان کرتے ہوئے آکلینڈ اور ویلنگٹن شہروں سمیت موٹر ویز ، ٹرین سٹیشن ،آفس ٹاورز اور شاپنگ مالز مکمل طور پر بند کردیئے ہیں ۔حکام کی جانب سے عوام کو انتباہ کیا گیا ہے کہ لاک ڈاون کے دوران گھروں پر رہیں یا بڑے جرمانے اور جیل کا سامنا کریں۔ نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن نے نیوز کانفرنس میں کہا کہ لاک ڈاون کے پہلے روز سڑکیں مکمل طور پر خالی ہیں اس کے لئے میں عوام کا شکریہ ادا کرنا چاہتی ہوں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت نے ضروری خدمات انجام دینے والے افرادکو کام پر جانے کی اجازت دی ہے تاہم سکولز ، دفاتر ، ریسٹور ینٹس ، عبادت گاہوں اور کھیل کے میدانوں کو لاک ڈاؤن کے پیش نظر مکمل طور پر بند کردیا گیا ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here