in

وزیرآعظم عمران خان دنیا کے مقبول رہنماؤں میں سے ایک

پاکستانی وزیرِ اعظم عمران خان دنیا کے مقبول ترین رہنماؤں میں سے ایک ہیں۔اُنکی شہرت کے چرچے صرف کرکٹ کے میدانوں تک ہی محدود نہیں بلکہ عمران خان سیاست اور فلاحی کاموں میں بھی اپنا لوہا منوا چکے ہیں۔اُن کے بارے مشہور ہے کہ وہ جس کام کے پیچھے پڑ جاتے ہیں اس کو مکمل کر کے ہی دم لیتے ہیں۔عمران خان اپنی انتھک محنت،ایمانداری اور اصول پسندی کی وجہ سے بے حد مشہور ہیں۔۔۔

عمران خان نے کرکٹ کے میدانوں میں بےحد نام کمایا اور اپنے ملک کا نام روشن کیا۔عمران خان اپنی ثابت قدمی انصاف پسندی کی وجہ سے مشہور ہیں۔اپنے دورہ کپتانی میں عمران خان نے بےحد فتوحات سمیٹی اور 1992 میں پاکستان کو ورلڈ چیمپیئن بنایا۔کرکٹ کے میدانوں کو خیر آباد کہنے کے بعد عمران خان نے فلاحی کاموں کا رخ کیا اور دن رات ایک کر کے چندہ جمع کیا۔عمران خان کی زندگی پر اُنکی والدہ کی بیماری اور موت کا بہت گہرا اثر ہے۔شوکت خانم کی کینسر کی وجہ سے موت نے عمران خان کو بہت رنجیدہ کیا جسکے بعد اُنہوں نے شوکت خانم کینسر ہسپتال کی بنیاد رکھی جہاں پر 75 فیصد لوگوں کا مفت علاج کیا جاتا ہے۔لاہور میں اس ہسپتال کی بنیاد رکھنے کے بعد عمران نے پاکستان کے دوسرے شهروں میں بھی اسکی بنیاد رکھی جس سے لاکھوں لوگ مستفید ہو رہے ہیں اور اس بات نے انکو پاکستان میں بے حد مقبول کیا۔۔

فلاحی کاموں کے بعد عمران خان نے سیاست کا رخ کیا اور پاکستانی روایتی سیاست کو ترک کر کے ایک نئی سیاست کی بنیاد رکھی۔اُنہوں نے کرپشن کے خلاف اور انصاف کی فراہمی کے لئے 22 سال جدوجہد کی جس کا صلہ اللہ نے انکو وزیرآعظم بنانے کی صورت میں دیا۔عمران خان لاکھوں لوگوں کی دوعاوں کا مرکز اور پاکستان کی پہچان ہیں۔پاکستان میں اُنکی مقبولیت کا کوئی ثانی نہیں۔2018 میں عمران خان نے 5 شہروں سے الیکشن لڑا اور پانچوں میں کامیاب ہوئے جو کہ انکی مقبولیت کا واضح ثبوت ہے۔۔۔

پاکستان کے علاوہ بین الاقوامی سطح پر بھی آجکل عمران خان کے چرچے ہیں۔عمر ان خان دنیا میں ایک نئے اُبھرنے والے اور اسلامی دنیا کے نمائندہ کے طور پر سامنے آئے ہیں۔عمران خان نے او آئی سی کے فورم پر مسلم دنیا کو متحد ہونے اور حضرت محمد کے خلاف مواد کی تشہیر پر اپنا واضح مؤقف پیش کیا۔اور اسکے بعد یو این میں بھی اسلام اور مسلمانوں کی بھرپور نمائندگی کی۔اس خطاب کے بعد عمران خان کو بین الاقوامی میڈیا پر زبردست کوریج ملی اور اُنکی مسلم رہنما کے طور شہرت میں بے پناہ اضافہ ہوا۔۔
حال ہی میں اردن میں رائل اسلامی اسٹریٹجک اسٹڈیز کانفرنس میں مسلم دنیا میں اثر رکھنے والے رہنماؤں کی فہرست میں عمران خان کو اپنا سال کا بہترین انسان قرار دیاگیا۔اسکے علاوہ قاہرہ میں امریکن یونیورسٹی کے پروفیسر شیلفر نے عمران خان کو اُنکے کارناموں کی وجہ سے 500 مسلم رہنماؤں کی فہرست میں سے سولہواں نمبر الاٹ کیا۔۔۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

پاک-سری لنکا تیسرے ٹی ٹوئنٹی میں اسٹیڈیم گلابی رنگ میں نہلا جائے گا

جے یو آئی فے نے آئندہ کے آزادی مارچ میں ہم جنس پرستی کی حمایت کا اعلان کیا ہے اور ساتھ ساتھ تین اہم دستاویزات جو کہ سوشل میڈیا پر گردش میں تھیں کی تردید کی ہے