عمران خان کی یو این میں ٹرمپ کے ساتھ پریس کانفرنس۔۔اسلام کے خلاف بولنے والوں کو کیا پیغام دیا۔۔۔

0
78

چند دن پہلے امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ اور بھارتی وزیرِ اعظم نریندر مودی نے ہیوسٹن(امریکہ) میں انڈین امیریکن کمیونیٹی سے خطاب کیا۔جس میں ڈونالڈ ٹرمپ نے نے کہا کہ وہ انڈین اور امیریکن فوجیوں کو خوش آمدید کہتے ہیں جو کہ اس خطے کو محفوظ بنانے کے لئے اکٹھے کام کر رہے ہیں اور مستقبل میں بھی بھارت اور امریکہ معصوم شہریوں کو اسلامی دہشتگردی سے بچانے کے لیے پر عزم ہیں۔صدر ٹرمپ کے اس بیان پر سوشل میڈیا پر ایک طوفان آگیا اور انکو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔کیوں کہ اُنہوں نے دشتگردی کو مذہب اسلام کے ساتھ لنک کر دیا جس سے کروڑوں مسلمانوں کی دل آزاری ہوئی۔۔۔

پاکستانی وزیرِ اعظم عمران خان جو کہ خود اس وقت امریکہ کے دورے پر ہیں نے اس بیان پر شدید ردِعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ کہ ہم صرف محمد کے اسلام کی پیروی کرتے ہیں اور اس وقت کسی دوسری قسم کے اسلام کا کوئی وجود نہیں۔اُنہوں نے مزید کہا کہ اسلام امن کا دین ہے اور صدر ٹرمپ کے اس بیان سے کروڑوں مسلمانو ں کی دل آزاری ہوئی ہے۔عمران خان نے کہا کہ مغربی دنیا میں مسلمانوں کے خلاف ایک غلط سوچ پائی جاتی ہے جسکی نفی کرنے کی ضرورت ہے۔اس سوچ کے زیرِ تسلط آ کے ہر مسلمان کو شک کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے اور اسے دھشت گرد سمجھا جاتا ہے۔۔

عمران خان نے کہا کہ مذہب اسلام کے ساتھ امتیازی سلوک کیا جاتا ہے۔نائن الیون کے بعد سے دہشتگردی کو اسلام کے ساتھ جوڑ دیا گیا ہے کیوں کہ مذہب کا استعمال کر کے بہت سے لوگوں کی برین واشنگ کی گئی اور جنت کی خواہش میں بہت سے خود کش بمبار تیار کیے گئے۔اسکا نقصان یہ ہوا کہ تمام مسلم کمیونیٹی کو دہشتگرد قرار دے دیا گیا۔عمران خان نے کہا کہ 2001 سے پہلے 70% خود کش بمبار تامل ٹائگرز تھے جنکا مذہب ہندومت تھا لیکن کسی نے بھی ہندو مت کو دشتگردی کے ساتھ نہیں جوڑا۔۔۔

عمران خان نے مزید کہا کہ تمام مذاھب امن اور سلامتی کا پیغام دیتے ہیں اور سب کے بنیادی اصول ایک جیسے ہیں۔بھارت اسلامی دشتگردی کا پروپیگنڈہ کر کے کشمیریوں اور مسلمانوں کی آواز کو دبانے کی کوشش کر رہا ہے اور نہتے لوگوں پر مظالم کی نئی تاریخ رقم کر رہا ہے۔بھارت 50 روز سے مقبوضہ کشمیر میں کرفیو لگا کے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کر رہا ہے جس کا دنیا کو نوٹس لینا چاہئے اوربین الاقوامی میڈیا کو اسلام کے خلاف منفی پروپیگنڈہ ختم کرنے میں کردار ادا کرنا چاہئے۔۔۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here