اب بُزرگ ملازمین کا خرچہ کون اُٹھائے گا؟

مزدور کو کورونا وائرس ہوا تو مالک علاج کا ذمہ دار ہوگا، سندھ حکومت نے جامعہ ایس او پی تیار کر لیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق سندھ حکومت کی جانب سے ایس او پیز تیار کئے گئے ہیں۔ تیار کردہ ایس او پی میں کہا گیا ہے کہ اگر کسی

صنعت یا کاروباری جگہ پر ملازم میں کورونا وائرس کا ٹیسٹ مثبت آتا ہے تو مالک اس کے علاج کا ذمہ دار ہوگا، ایس او پی کے مطابق ملازمین کے درمیان کم سے کم تین فٹ کا فاصلہ ہونا ضروری ہے۔ایس پی اوپیز کے مطابق 55 سال سے زائد عمر کے ملازمین سے مزدوری نہیں کرائی جائے گی۔ ساتھ ہی ساتھ وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ نے اگلے دو ہفتے لاک ڈاؤن سخت کرنے کا کہا ہے۔کراچی میں میڈیا بریفنگ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ صوبے میں ٹیسٹنگ کی استعداد 1500 تک لے آئے ہیں۔تاہم دس فیصد کورونا پوزیٹیو آرہے ہیں۔وزیراعلی سندھ نے مزید کہا کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کی شناخت ظاہر کرنا مناسب نہیں۔بہت بڑے بڑے ادارے کے لوگ بھی کورونا سے متاثر ملازم کے نام بتا رہے ہیں۔بڑا آدمی ہو تو اپنا نام چھپائے ، چھوٹے ملازم کا نام بتا دے۔مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ سندھ میں اموات کی شرح 2.4 ہوگئی ہے جو بہت تشویشناک ہے۔کورونا کے بعض مریضوں کی اسپتال پہنچنے کے چوبیس گھنٹے میں موت واقع ہو گئی ۔ کچھ ایسے کیسز سامنے آئے ہیں کہ انہیں اسپتال ہیں مردہ حالت میں پہنچایا گیا۔ماہرین کا کہنا ہے کہ ہلاک ہوئے افراد کے پھیپھڑے متاثر ہوئے۔پندرہ کیسز ایسے ہیں جن کی ہم نے تدفین کورونا کے مریضوں کی طرح کروائیں۔ایسی اموات بھی ہے جو رپورٹ نہیں ہورہی ہیں۔سو کے قریب اموات ایسی ہیں جن پر کورونا کا شبہ ہے۔ دوسری جانب پنجاب میں بھی پہلے حجام کی دکانیں کھولی گئیں تھی لیکن نئے حکم نامے کے مطابق دکانیں بند کرا دی گئی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *