مصباح الحق کو ہیڈ کوچ کیوں مقرر کیا گیا ،وجہ جانیے

0
6

حالیہ دنوں میں پی سی بی نے پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان مصباح الحق کو پاکستان کرکٹ ٹیم کا ہیڈ کوچ +چیف سیلیکٹر مقرر کرنے کا اعلان کیا۔۔اس فیصلے پر ہمیں ملا جلا رجحان دیکھنے کو ملا۔کچھ لوگوں نے مصباح کو ڈیفینسیو اپروچ اور ناتجربہ کاری کی وجہ سے تنقید کا نشانہ بنایا جب کہ کچھ نے پاکستان ٹیم کے سب سے کامیاب کپتان اور مضبوط اعصاب کا مالک ہونے کی وجہ سے اس فیصلے کی تائید کی۔۔

2010 کے مشہورِ زمانہ اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل کے بعد جب پاکستان کرکٹ ٹیم کی ذمہ داری مصباح کے کندھوں پر ڈالی گئی تو مصباح نے اس زمہ داری کو نہ صرف احسن طریقے سے نبھایا بلکہ ایک کمزور ٹیم کے ساتھ بہت سی نمایاں فتوحات اپنے نام کیں۔مصباح کی پروفائل میں ایسی بہت سی باتیں ہیں جنہوں نے مصباح کو کوچنگ کے لئے آٹومیٹک چوائس بننے میں مدد کی۔۔ان میں سب سے اہم چیز مصباح کا ریٹائرمنٹ کا کم دورانیہ اور اور انکی ڈومیسٹک کرکٹ سے مضبوط اٹیچمنٹ ہے۔ایسے حالات میں جب پاکستان کرکٹ بورڈ پاکستانی کرکٹ کی ازسرنو تنظیم نو میں مصروف ہے اور ڈومیسٹک کرکٹ کے ڈھانچے کو تبدیل کرنے جا رہا ہے تو مصباح ہی وہ واحد شخصیت ہیں جن کے تجربے اور صلاحیتوں سے استفادہ حاصل کیا جا سکتا ہے۔

دوسری طرف اگر پاکستان کرکٹ ٹیم کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے تو ٹی ٹوینٹی میں قومی ٹیم پہلے نمبر پر ہے جب کہ ایک روزہ اور ٹیسٹ رینکنگ میں قومی ٹیم مسلسل تنزلی کا شکار ہے۔جسکا واضح مطلب ہے کہ ہمارے کھلاڑیوں کو لمبے دورانیے کی کرکٹ میں زیادہ کام کرنے کی ضرورت ہے۔اگر آئی سی سی ورلڈ ٹیسٹ چمپیئن شپ کو بھی ذہن میں رکھ کر دیکھا جائے تو مصباح ہی اس کام کے لئے بہترین انتخاب ہو سکتے ہیں۔چوں کہ قومی ٹیم کا اگلا بڑا امتحان ٹیسٹ چمپیئن شپ ہے جسکو عبور کرنا مصباح کے بغیر انتہائی مشکل ہے۔۔

سلیکشن کمیٹی اور کوچنگ اسٹاف کے کمیونیکیشن گیپ کو ختم کرنے کے لئے پاکستان کرکٹ بورڈ پہلے ہی یہ فیصلہ کر چکا تھا کہ سلیکشن اور ہیڈ کوچ کی زمہ داری ایک ہی فرد کے سپرد کی جائے تا کہ بلیم گیم کو ختم کیا جا سکے اور ٹیم کی کارکردگی کی ذمہ داری ایک ہی فرد کو مکمل با اختیار بنانے کے بعد اسی کے کھاتے میں ڈالی جا ئے۔بین الاقوامی کوچ کے ساتھ اس نئے سسٹم کا چلنا ذرا مشکل تھا کیوں کہ اسے پہلے پاکستان کرکٹ کے اسٹرکچر اور کھلاڑیوں کو سمجھنے کے لیے وقت درکار ہو تا اور دوسرا پاکستان کرکٹ کا بین الاقوامی کوچز کے ساتھ سفر زیادہ اچھا نہیں رہا ہے اسی لیے اس ڈبل رول کے لئے مصباح جیسے زیرک،با صلاحیت اور ڈومیسٹک کرکٹ کی سمجھ بوجھ رکھنے والے کھلاڑی کا انتخاب کیا گیا۔۔۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here